موجودہ حکومت نے تین سال میں عوام کو عذاب، مہنگائی اور ٹیکسز کے سوا کچھ نہیں دیا، اسفندیارولی خان

منگل 26 اکتوبر 2021 23:58

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 26 اکتوبر2021ء) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیارولی خان نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت نے تین سال میں عوام کو عذاب، مہنگائی اور ٹیکسز کے سوا کچھ نہیں دیا۔تین سال میں اشیائے ضروریہ کی قیمتیں 133فیصد بڑھ چکی ہیں، حکومت کے پاس نااہلی کے سوا کچھ نہیں۔ باچاخان مرکز پشاور سے جاری بیان میں عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیارولی خان نے کہا کہ گھی، چینی، آٹا، دالیں، پیاز، چاول، ٹماٹر غرض کوئی ایسی چیز نہیں جو سستی ہوئی ہو۔

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 47.8فیصد تک اضافہ کیا گیا لیکن آج بھی قیمتیں مزید بڑھائی جارہی ہیں۔ایک بار پھر عوام پر پٹرول بم گرانے کی تیاریاں ہورہی ہیں، تاریخ کی بلند ترین سطح پر قیمتیں ہونے کے باوجود حکومت عوام پر مزید بوجھ ڈال رہی ہے۔

(جاری ہے)

قرضوں بارے ان کا کہنا تھا کہ کشکول توڑنے والوں نے رواں سال کی پہلی سہ ماہی میں تین ارب 10کروڑ ڈالر کا قرضہ لیا۔

یہ عوام کو نہیں بتایا جاتا کہ پی ٹی آئی کی حکومت نے تین سالوں کے دوران قرضوں میں 60فیصد اضافہ ہوا۔ن لیگ نے جتنا قرضہ لیا پی ٹی آئی نے صرف تین سالوں میں انکے قرضے کا 140فیصد مزید قرض لیا۔جتنا قرضہ 10سال میں لیا گیا اس کا 80فیصد پی ٹی آئی نے صرف تین سال میں لیا لیکن ملک آج بھی بدترین معاشی بحران کا شکار ہے۔ اے این پی سربراہ کا کہنا تھا کہ آئی ایم ایف کی جھولی میں ملک ڈال کر آج انہی کے ایماء پر بجلی، پٹرول اور دیگر مصنوعات کی قیمتیں بڑھائی جارہی ہیں۔

اے این پی نے عوام کے درمیان رہ کر عوامی مسائل پر آواز اٹھائی اور ہمیشہ اٹھاتی رہے گی، یہ مہنگائی ناقابل برداشت ہے۔مہنگائی کے خلاف عظیم الشان احتجاجی جلسہ عام 10نومبر کو پشاور میں ہوگا، عوام کو اب ان نااہلوں کے خلاف نکلنا ہوگا

پشاور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments