ٖمحکمہ صحت اور ICRC نے محفوظ صحت کی دیکھ بھال کے لیے قانون بارے آگاہی مہم کا آغاز کردیا

منگل 30 نومبر 2021 00:24

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 29 نومبر2021ء) محکمہ صحت اور ICRC نے محفوظ صحت کی دیکھ بھال کے لیے قانون کے بارے میں آگاہی مہم کا آغاز کردیا پشاور() (ICRC) انٹرنیشنل کمیٹی آف ریڈ کراس (ICRC) نے خیبر پختونخواہ کے محکمہ صحت کے ساتھ ہاتھ ملایا "خیبر پختونخواہ صحت کی دیکھ بھال کی خدمات فراہم کرنے والے اور سہولیات (تشدد اور املاک کو نقصان کی روک تھام) ایکٹ، 2020" کے لیے آگاہی مہم کا میڈیا آغاز کردیا یہ ایکٹ ضم شدہ اضلاع سمیت کے پی میں صحت کی دیکھ بھال کے تحفظ کو بڑھانے کی جانب ایک اہم کامیابی ہے۔

یہ صحت کی دیکھ بھال کرنے والے کارکنوں، اداروں کے ساتھ ساتھ مریضوں اور ان کے ساتھیوں کے تشدد سے تحفظ اور تحفظ کو یقینی بنانے کی کوشش کرتا ہے، جس کا ایک بڑا مقصد ہر اس میں شامل ہر فرد کے لیے معیاری اور محفوظ صحت کی دیکھ بھال کی خدمات کی بلا تعطل فراہمی کو یقینی بنانا ہے۔

(جاری ہے)

اس موقع پر ' ڈاکٹر ضیا الحق وائس چانسلر کے ایم یو 'سپیشل سیکرٹری ہیلتھ ڈاکٹر فاروق جمیل ' ڈاکٹر عبدالطیف ایل آرایچ ڈین بھی موجود تھے کی تقریب پی سی ہوٹل میں منعقد ہوئی، " اس موقع پر خیبر پختونخوا کے سپیکر مشتاق احمد غنی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ کے پی کے میں صحت کی دیکھ بھال کا احترام اور تحفظ کرنے کی پہلے سے زیادہ ضرورت ہے کیونکہ دنیا COVID-19 کے صحت کی دیکھ بھال کرنے والے کارکنوں اور مریضوں کے ساتھ نمٹ رہی ہے، جو ہماری وبائی بیماری کی عکاسی کرتی ہے ' یہ قانون، کے پی میں صحت کی دیکھ بھال کے معیار کو بہتر بنانے کے حقوق کے عزم کا یکساں احترام کرتا ہے۔

" یہ ایکٹ مختلف کیڈرز میں صحت کی دیکھ بھال کرنے والے کارکنوں کو تحفظ فراہم کرنے کے لیے متعلقہ قانونی تعریفوں کو بھی وسیع کرتا ہے اور صحت کی دیکھ بھال کی خدمات میں رکاوٹ، صحت کی دیکھ بھال کی سہولیات کے اندر غیر مجاز ہتھیاروں کے داخلے پر پابندی لگاتا ہے اور مریضوں اور ان کے حقوق کے تحفظ کے لیے صحت کی دیکھ بھال کرنے والے کارکنوں اور سہولیات کی ذمہ داریوں کی وضاحت کرتا ہے۔

حاضرین سے اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے خیبر میڈیکل یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر ضیا الحق نے کہا کہ 2020 میں کے پی میں صحت کی دیکھ بھال کے تحفظ کے لیے کے پی کے محکمہ صحت اور آئی سی آر سی کی مسلسل اور پرعزم کوششوں کے نتیجے میں یہ قانون سامنے آیا کے پی میں صحت کی دیکھ بھال کے تحفظ کے قانونی فریم ورک کا جائزہ (محکمہ صحت، کے پی اور آئی سی آر سی کے ذریعے مشترکہ طور پر منعقد کیا گیا) اور متعلقہ اسٹیک ہولڈرز بشمول ڈاکٹرز، پیرا میڈیکس، نرسز، قانونی ماہرین اور سول سوسائٹی کی تنظیموں کے ساتھ مشاورت کے سلسلے کی سفارشات، اس کی ترقی کی کلید تھی اس مہم کی اہمیت پر تبصرہ کرتے ہوئے، پاکستان میں ICRC کے ہیلتھ کیئر ان ڈینجرس (HCD) اقدام کے سربراہ ڈاکٹر میرویس نے کہا، "یہ میڈیا مہم اس انتہائی اہم ایکاپنے HCID پروگرام کے تحت، ICRC پاکستان میں صحت عامہ کے اداروں، میڈیکل اکیڈمی، ہیلتھ کیئر اتھارٹیز، اور پاکستان ریڈ کریسنٹ سوسائٹی سمیت متنوع اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ مل کر شواہد پر مبنی اقدامات کو فروغ دے کر پاکستان میں صحت کی دیکھ بھال کو محفوظ بنانے کے لیے کام کر رہا ہے۔

اس سال، ICRC اور اس کے شراکت داروں نے پاکستان میں اپنی نوعیت کا پہلا ای لرننگ پروگرام بھی شروع کیا تاکہ صحت کی دیکھ بھال کرنے والے کارکنوں کو صحت کی دیکھ بھال کی سہولیات میں تشدد کو کم کرنے اور اس پر قابو پانے کے بارے میں تربیت دی جائے پروگرام کے آخر میں بہترین کارکردگی پر ڈاکٹرز میں شیلڈ بھی تقسیم کئے گئے

پشاور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments