عید الاضحی کے موقع پشاور شہر کی مثالی صفائی کی جائے گی،ملازمین کی تمام واجبات ادا کرنے کے بعد عملہ صفائی کےلیے پرجوش ہے، کمشنر پشاور ڈویژن

اتوار 16 جون 2024 20:30

پشاور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 16 جون2024ء) وزیراعلی ٰخیبرپختونخوا علی امین گنڈا پور کی جانب سے ڈبلیو ایس ایس پی کے ملازمین کی تمام واجبات ادا کرنے کے بعد عملہ صفائی پرجوش ہے اور وہ امسال عید الاضحی ٰپر بہترین نتائج کے لئے اپنی تمام تر توانائیاں صرف کریں گے، ان خیالات کا اظہار کمشنر پشاور ڈویژن/چیف ایگزیکٹو ڈبلیو ایس ایس پی ریاض خان محسود نے عید الاضحی سے ایک روز قبل شہر کے مختلف علاقوں کا دورہ کرتے ہوئے کیاعید الاضحی کے موقع پر شہر کی صفائی کے لیے 3 ہزار سے زائد سینٹری ورکرز اپنے فرائض سرانجام دیں گے۔

اس کے علاوہ ضلع پشاور کی تمام تحصیل میونسپل ایڈمنسٹریشن بھی صفائی عملہ سمیت صفائی کے لیے ڈیوٹیوں پر موجود رہیں گے۔عملہ صفائی عید الاضحی کے موقع پر تینوں دن رات گئے تک فیلڈ میں موجود رہے گا۔

(جاری ہے)

اتوار کے روز بھی ان کی چھٹیاں منسوخ کر دی گئیں جبکہ شہر کی صفائی مکمل کر لی گئی ہے تاکہ کل کوئی مشکل درپیش نہ ہو۔قربانی کے جانوروں کی آلائشیں اور باقیات کے لئے پوائنٹس مخصوص کر دیئے گئے ہیں، آلائشیں اٹھانے کے بعد پوائنٹس کی دھلائی، صفائی اور اسپرے کیا جائے گا. اس کے ساتھ ساتھ اہم سڑکوں اور شاہراہوں کی بھی آلائشیں اٹھانے کے بعد دھلائی کی جائے گی ۔

شہر بھر کی آلائشیں شہر سے باہر نواحی علاقے شمشتو میں دفن کی جائے گی جس کے لیے سو فٹ چوڑا اور 6 فٹ گہرا گھڑا کھودا گیا ہے۔آلائشیں دفنانے کے بعد گھڑے کو مٹی سے ڈھانپا جائے گا اور اس پر اسپرے کیا جائے گا۔کمشنر پشاور ڈویژن نے ڈبلیو ایس ایس پی کے تمام زونل دفاتر کا دورہ کیا اور ملازمین کی حاضری چیک کی اور زونل منیجرز سے آپریشن پلان پر عملدرآمد کے حوالے سے بات چیت کی اور سڑکوں پر موجود عملہ صفائی کی حوصلہ افزائی کی۔

انہوں نے واضح کیا کہ بہترین نتائج پر ملازمین کو انعامات اور مراعات دی جائیں گی جبکہ خراب کارکردگی پر سخت تادیبی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ قربانی کی جانوروں کی آلائشوں اور باقیات کو گلی کوچوں میں پھینکنے کی بجائے مختلف علاقوں میں مخصوص کردہ پوائنٹس تک پہنچائے تاکہ عملہ صفائی آسانی سے اسے اٹھا کر مرکزی پوائنٹس تک پہنچائے اور شہر کی بہترین صفائی ممکن بنائی جا سکے۔

متعلقہ عنوان :

پشاور میں شائع ہونے والی مزید خبریں