ں*عوام دشمن، غریب دشمن پالسیوں کی سخت مذمت کرتے ہیں،رہنما پشتونخواملی عوامی پارٹی

اتوار ستمبر 23:45

کوئٹہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 27 ستمبر2020ء) پشتونخواملی عوامی پارٹی کے مرکزی پریس ریلیز میں بجلی ،ادوائیات اور یوٹیلیٹی سٹور میں ملنے والی مختلف اشیاء کی قیمتوں میں اضافے کو مسترد کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ موجودہ سلیکٹڈ حکومت بین الاقوامی مالیاتی اداروں ، استعماری اداروں بالخصوص آئی ایم ایف کی دبائو میں آکر آئے روز یوٹلیٹی بلز ، ادوائیات، اشیاء خوردونوش واشیاء ضروریات کی قیمتوں میں اضافہ کررہی ہے جس نے غریب عوام سے دو وقت کی روٹی تک چھین لی ہے اور ایسے عوام دشمن، غریب دشمن پالسیوں کی سخت مذمت کرتے ہیں۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ روز مختلف اشیاء کی قیمتوں میں وفاقی کابینہ کے ذریعے منظوری دیکر قیمتی بڑھا دی جاتی ہے بدترین مہنگائی اور ناروا ٹیکسز کے نظام میں عوام کو ریلیف دینے کی بجائے عوام پر روزمہنگائی کے بم گرائے جارہے ہیں جس کا مقصد عوام کو حاصل معمولی روزگا ر کے ذرائع چھین کر ملک میں افراء تفری کا ماحول پیدا کرناہے حلال کی کمائی میں مہنگے اور ناروا ٹیکسز سے بھرے یوٹیلٹی بلو کی ادائیگی کرنا اور گھر یلو اشیاء ضروریات وخوراک پوری کرنا اب نا ممکن ہوچکا ہے۔

(جاری ہے)

بیان میں کہا گیا ہے کہ نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا ) کی جانب سے بجلی مہنگی کرنے کے بعد صارفین پر162ارب کا بوجھ منتقل ہوگا اور یہ رقم 12ماہ میںوصول کی جائے گی۔جبکہ وفاقی حکومت سے منظوری کی صورت میں فی یونٹ بجلی ایک روپے 62 پیسے مہنگی ہو جائے گی۔بیان میں کہا گیا ہے کہ 94ادوئیات کی قیمتوں میںتقریباً 70فیصد اضافہ کردیا گیا ہے اور باقاعدہ نوٹیفکیشن بھی جاری کردیا گیا ۔

جبکہ ان تمام ادوئیات میں اضافہ کیا گیا ہے جس کی ہر گھر میں بالخصوص ان دنوں میں عام خاص ضرورت پائی جاتی ہے جس میں بخار، سردرد، امراض قلب، ملیریا، شوگر، گلے میں خراش، فلو، پیٹ درد، آنکھ، کان، دانت منہ اور بلڈ انفیکشن کی دوائیںشامل ہیں۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ اسی طرح یوٹیلیٹی اسٹورز پر کوکنگ آئل، گھی اور دودھ کی قیمتیں بڑھ گئیں آئل 17روپے، گھی 4روپے، برانڈ دودھ 5روپے لیٹر تک مہنگاہوگیا یعنی اب تقریباً 152دودھ کے فی لیٹر کا پیک ملے گا اور بچوں کے سیریلز کی قیمت میں20سے 38روپے تک اضافہ کیا گیا اورنوٹیفکیشن کے مطابق دودھ، ٹی وائٹنر اور کافی کی قیمتوںسمیت برانڈ شیمپو کی قیمت میں 9 روپے سے 20 روپے تک اضافہ کیاگیا ہے جس سے 90 ملی گرام شمپو کی بوتل 89 سے بڑھ کر98 روپے ہوگئی ہے اور یوٹیلیٹی اسٹورز پر کپڑے دھونے کے ڈٹرجنٹ کی قیمتوں میں بھی اضافہ کردیا گیا ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ ملک میں سلیکٹڈ حکومت کی نااہلی اور ناتجربہ کاری کے باعث ہر شعبہ زندگی بدترین طور پر مفلوج ہوچکا ہے ۔ عام خاص غیر منتخب لوگوں کو مختلف وزارتوں کے مشیر اور معاون خصوصی بناکر عوام دشمن فیصلے کیئے جارہے ہیں جن کا مقصد صرف کرپشن کرنا اور عوا م کو حاصل ماضی میں دیئے گئے ریلیف کو ختم کرنا ہے ۔ ملک میں اس وقت بدترین بیروزگاری اور مہنگائی ہے ایسے میں ہر شہ پر بلاجواز ٹیکسز کے نفاذ ، قیمتوں میں اضافے کرنے سے بھوک وافلاس اور غربت میں مزید اضافہ ہوگا۔

کیونکہ سلیکٹڈ حکومت کی عوام دشمن ، غریب دشمن پالیسیوں سے امیر مزید امیر جبکہ غریب مزید غریب ہوتا جارہا ہے یہاں تک کہ غریب کو اس وقت چھت کا سایہ اور دو وقت کی روٹی بھی میسر نہیں ۔ بیان میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ ادوئیات ، بجلی او ریوٹیلٹی سٹور اشیاء میں کی گئی اضافی قیمتوں کو واپس لیکر عوام کو ریلیف دیا جائے اور عوام دوست ، غریب دوست پیکج کا اعلان کرکے عوام کو ریلیف دیا جائے۔

کوئٹہ شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments