جمعیت علماء اسلام نظریاتی کے زیراہتمام فرانسیسی حکومت کی توہین آمیز خاکوں کے تشہیر کیخلاف عظیم الشان تحفظ ناموس رسالت ریلی وتحفظ دینی مدارس ریلی

کفری قوتیں اسلام دشمنی میں پاگل ہو چکے ہیں ،عالم اسلام کے حکمران ایمانی غیرت کامظاہرہ کرتے ہوئے فرانس سے تعلقات منقطع کریں اور سفیروں کو ملک بدر کیاجائے اور امت مسلمہ فرانس کی مصنوعات سے بائیکاٹ کریں ،مولاناعبدالقادرلونی ودیگر کا خطاب

جمعرات اکتوبر 23:21

کوئٹہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 29 اکتوبر2020ء) جمعیت علماء اسلام نظریاتی کے زیراہتمام فرانسیسی حکومت کی توہین آمیز خاکوں کے تشہیر کے خلاف عظیم الشان تحفظ ناموس رسالت ریلی وتحفظ دینی مدارس ریلی ضلعی سیکرٹریٹ نیو نجم الدین روڈ سے نکالی گئی ،کانفرنس سے مرکزی نائب امیر مولاناعبدالقادرلونی مرکزی جوائنٹ سیکرٹری مولانامحمودالحسن قاسمی ضلعی نائب امیر مولانانیازمحمد مرکزی سیکرٹری اطلاعات سیدحاجی عبدالستارشاہ چشتی مرکزی سیکرٹری مالیات حاجی حیات اللہ کاکڑ صوبائی سرپرست مولاناخدائے نظرجنرل سیکرٹری حاجی حبیب اللہ صافی ضلعی کنوئینر مولانامحمدابراہیم صوبائی سیکرٹری اطلاعات مولوی رحمت اللہ حقانی ضلعی صدر عزیز اللہ ذاکری ودیگر نے خطاب کیا۔

احتجاجی ریلی میں مولاناعبدالقادر لونی نے گستاخ رسول فرانسیسی صدر کے قتل پر پچاس لاکھ ڈالر انعام کااعلان کرتے ہوئے کہا کہ تاریخ گواہ ہے کہ گستاخ رسول ؐکو مسلمان نے معاف نہیں کیا گستاخ رسولؐکے لیے اسلام نے چودہ سو سال پہلے قتل کاسزا مقرر کیا رسول اللہ ؐکی گستاخی ناقابل معافی جرم ہے عالم اسلام کے حکمران ایمانی غیرت کامظاہرہ کرتے ہوئے فرانس سے تعلقات منقطع کریں اور سفیروں کو ملک بدر کیاجائے اور امت مسلمہ فرانس کی مصنوعات سے بائیکاٹ کریں انہوں نے کہا کہ فرانسیسی صدر میں عمارات پر توہین آمیز خا کے لگا کر پونے دو ارب مسلمانوں کے دل آزاری کی گئی اورعالم اسلام کے حکمرانوں کے غیرت ایمانی کو للکارا حضورؐسے محبت اور ناموس رسالت کا تحفظ ایمان کا تقاضا ہے مسلمان گستاخی کے عمل کو کسی طور برداشت نہیں کر سکتے انہوں نے کہا کہ کفری قوتیں اسلام دشمنی میں پاگل ہو چکے ہیں ماضی میں چارلی ہیبڈو اور گیرٹ وائلڈرز نے جو ناپاک جسارت کی۔

(جاری ہے)

آج ایک دفعہ پھر مسلمان کی ضمیر جنجھوڑنے کے لیے فرانسیسی صدر اس ناپاک اقدام کودہرایا جا رہاہیں اور گستاخانہ خاکے بنانے والوں کی سرپرستی کر رہے ہیں۔ جناب سرور کائناتؐ کے یہ گستاخانہ خاکے محض اتفاق کے طورپر شائع نہیں کیے تھے بلکہ یہ واضح طور پر مسلمانوں کے جذبات کو بھڑکانے اور ان کے رد عمل کی سطح اور کیفیت کوجانچنے کی ایک منظم کوشش ہے انہوں نے کہا کہ ناموس رسالت کا مشن دو ارب مسلمانوں کا مشن ہے اور حرمت رسول کے دفاع کے لئے مسلمانوں کی نظروں میں حرمت رسول کی حفاظت سے بڑھ کر اور کسی چیز اہمیت نہیں ہونی چاہئے ناموس رسالت کے دفاع کے لییایک نہیں ہزاروں ،لاکھوں،کروڑوں اربوں مسلمان غازی علم دین شہید عامر چیمہ ،ممتازقادری ،خالد، بن کر میدان میں نکل جائینگے انہوں نے کہا کہ بین المذاہب ہم آہنگی کا درس دینے والوں نے آج کیوں خاموشی اختیار کیا مسلسل امت مسلمہ کی جذبات کو مجروح کیا جارہاہے امریکہ میں قرآن پاک نذرآتش کیاگیا، افغانستان میں مقدس کتاب کی بے حرمتی کی گئی ڈنمارک سے لے کر پیرس کے چارلی ہیبڈو تک، اور اس سے بھی قبل سلمان رشدی اور تسلیمہ ملعون نسرین کی کتابوں میں توہین رسالت کی ناپاک جسارت سے مسلمان کی غیرت کو چیلنج کرہا ہے لیکن نام نہاد بین المذاہب اہم ہنگی نے لبوں پر مہر سکوت لگا کر خاموش بیٹھے ہیں انہوں نے کہا کہ اے مسلم نوجوانو! حضرت اسامہ رضی اللہ عنہ حضرت عمر رضی اللہ عنہ خالد بن ولید‘ صلاح الدین ایوبی اور غازی علم الدین شہید کے جذبات لے کر اٹھو اور ان گستاخوں کا سراغ لگا کر انہیں کیفر کردار تک پہنچائو تاکہ حشر کے میدان میں شافع محشرہ کے سامنے سرخرو ہوسکو! صحابہ کرام اپنی پیٹھوں پر، سینوں پر اور اپنے جسم پر ہر زخم جھیلنے کو تیار رہتے تھے مگرآپ کے جسم اطہر کو خراش بھی لگے اس کا وہ تصور بھی نہیں کرسکتے تھے۔

کوئٹہ شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments