علاقے میں شیشہ پوائنٹس اورمنشیات اڈے کھلنے سے نوجوانوں کی زندگیاں تباہ ہورہی ہیں: سید حاجی عبدالستا ر چشتی

سپریم کورٹ نے شیشہ کیفے اور ریسٹورنٹس کے خلاف بھرپور آپریشن شروع کرنے کا نوٹس بھی جاری کیا لیکن انتظامیہ بے بسی کا مظاہرہ کررہی ہے : سیکرٹری اطلاعات جمعیت علمائے اسلام نظریاتی پاکستان

پیر 17 جنوری 2022 23:24

کوئٹہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 17 جنوری2022ء) جمعیت علما اسلام نظریاتی پاکستان کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات سید حاجی عبدالستارشاہ چشتی نے کہا کہ چیف جسٹس بلوچستان ہائیکورٹ وزیراعلی شراب کے لائسنیس منسوخ شیشہ ودیگرمنشیات اڈوں و پوائنٹس کے خلاف سخت ایکشن لیں مختلف مقامات پر شیشہ پوائنٹس اورمنشیات اڈے کھلنے سے نوجوانوں کی زندگیاں تباہ ہورہی ہیں تیزی سے تعلیمی اداروں تک پہنچ چکی ہے شیشہ کلبوں میں نوجوان نسل شیشہ کے استعمال کے ساتھ ساتھ،رات گئے تک ان کلبوں میں آئس اور دیگر منشیات کی لت میں بھی مبتلا ہونے لگی ہے۔

شیشہ کلبوں میں 15سال سی25سال کی عمر کے نوجوان جن میں زیادہ تعلیم یافتہ نوجوان شیشہ پینے کے لئے آتے ہیں اسی وجہ سے جرائم بڑھ رہی ہیں انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ نے شیشہ کیفے اور ریسٹورنٹس کے خلاف بھرپور آپریشن شروع کرنے کا نوٹس بھی جاری کیا لیکن انتظامیہ بے بسی سے شہر کے مختلف علاقوں میں شیشہ کیفے بڑھ رہی ہیں ریسٹورنٹ، چائے خانوں اور کافی شاپس پر بھی شیشہ کا استعمال فیشن بن گیا ہے۔

(جاری ہے)

جہاں نوجوانوں کو نشہ آور اشیا فراہم کی جاتی ہیں وطن و قوم کے دشمن منشیات فروشوں نے نوجوان نسل کو منشیات کی لعنت میں مبتلاکرکے ہزاروں گھروں کو اجڑ دئیے اور لاکھوں بچوں کو والدین ہونے میں یتیم بنائینسل نو کو منشیات فراہم کر کے ملک وقوم کو تباہی کی طرف لے جارہی ہے ان انسانیت دشمن عناصر سے آج پاکستان میں منشیات کے عادی افراد کی تعداد 80لاکھ سے تجاوز کر چکی ہے، ہر سال تقریبا 10فیصد تک منشیات کے عادی افراد کا معاشرہ میں اضافہ ہو رہا ہے منشیات کی وجہ سے معاشرے میں کئی قسم کے جرائم جنم لیتے ہیںمنشیات کی لعنت ہمارے معاشرے کیلئے زندگی اور موت کا مسئلہ بن چکی ہے نہ صرف منشیات بلکہ اپنے ساتھ خاندانوں کی زندگی کو بھی برباد کرتا ہے۔

کوئٹہ شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments