پٹواری کو ویلج آفیسر کے عہدے کا نام دینے کی منظوری دیدی گئی ہے ، سردار احمد علی خان دریشک

بدھ نومبر 16:40

راجن پور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 06 نومبر2019ء) چیئرمین لینڈ ریکارڈ اتھارٹی پنجاب ایم پی اے سردار احمد علی خان دریشک نے کہا کہ محکمہ مال کی کارکردگی اورپنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی سے متعلقہ امور کا جائزہ لینے کیلئے وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدارکی زیر صدارت منعقدہ اجلاس میں پنجاب میں پٹواری کے عہدے کا نام تبدیل کرنے کا فیصلہ کیاگیاہے، پٹواری کو ویلج آفیسر کے عہدے کا نام دیا جائے گا۔

ویلج آفیسرکو 14واں سکیل ملے گا اور بھرتی پنجاب پبلک سروس کمیشن کے ذریعے ہوگی، بھرتی کے بعد 6ماہ کی تربیت لازم ہوگی۔ ’’اے پی پی‘‘سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا ہے کہ وزیراعلیٰ نے ویلج آفیسر کو لیپ ٹاپ بھی دینے کی بھی منظوری دے دی ہے۔حاضر سروس پٹواریوں کو 11واں سکیل اورگرداور/قانونگو کو 14واں سکیل دینے کی تجویز۔

(جاری ہے)

پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی کے سٹاف کی ترقی کیلئے سروس سٹرکچر بنایا جائے گا۔

لاہور کی ایک تحصیل کو ریونیوکے حوالے سے ماڈل تحصیل بنانے کا فیصلہ کیاگیا۔ وزیراعلیٰ نے کمشنر لاہورڈویڑن کو ایک ماڈل تحصیل بنانے کیلئے فوری اقدامات کی ہدایت کی ہے۔ انہوں نے بتایاکہ صوبہ کے دوردراز علاقوں میں (115)اراضی سینٹرزکے قیام کو دسمبر تک مکمل کیا جائے گا۔ حکومت ریونیوکے معاملات میں آسانیاں پیدا کرنے کیلئے انقلابی اقدامات کررہی ہے۔

وزیراعلیٰ کی ہدایت پرلینڈ ریکارڈ سینٹرز پرادائیگی کیلئے بینک کا کاؤنٹربنایا جائیگا کیونکہ بینک کاؤنٹر کے قیام سے شہریوں کو لینڈ ریکارڈ سینٹر کے بار بار چکر لگانے کی زحمت سے چھٹکارا ملے گا۔شہریوں کو اراضی کی دستاویزات کے حصول میں کسی قسم کی دشواری کا سامنا نہیں کرناپڑے گا۔شہریوں سے رشوت لینے والے افسروں اوراہلکاروں سے کسی قسم کی کوئی رعایت نہیں کی جائیگی اور انکی جگہ حوالات میں ہوگی اور کسی صورت شہریوں سے پیسے لینے کے حوالے سے شکایت کو برداشت نہیں کیاجائیگا۔

انہوں نے بتایاکہ اجلاس میں اسسٹنٹ ڈائریکٹر لینڈ ریکارڈ کو تحصیلداراورلینڈ ریکارڈ آفیسر کو نائب تحصیلدارکے عہدوں میں بدلنے کی تجویز دی گئی جبکہ اجلاس میں سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو نے وزیراعلیٰ کو تفصیلی بریفنگ دی۔صوبائی وزراء میاں اسلم اقبال،ملک محمد انور،چیف سیکرٹری،پرنسپل سیکرٹری وزیراعلیٰ پنجاب،متعلقہ محکموں کے سیکرٹریز اور آفیسران اجلاس میں شریک تھے۔

راجن پور شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments