مدرسے کے طالبعلم سے زیادتی کے الزام میں اُستاد گرفتار

پولیس نے 12 سالہ بچے کے طبی معائنے کے بعد اُستاد کو گرفتار کیا

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین ہفتہ ستمبر 11:31

مدرسے کے طالبعلم سے زیادتی کے الزام میں اُستاد گرفتار
راولپنڈی (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 21 ستمبر 2019ء) : راولپنڈی میں مدرسے کے طالبعلم کو زیادتی کا نشانہ بنانے پر اُستاد کو گرفتار کر لیا گیا ۔ تفصیلات کے مطابق راولپنڈی کے علاقہ دھمیال میں صدر بیرونی پولیس تھانے کے حدود سے مدرسے کے طالبعلم کو مبینہ طور پر زیادتی کا نشانہ بنانے پر مدرسے کے استاد کو گرفتار کرلیا گیا۔ پولیس نے مذکورہ شخص کو 12 سالہ بچے کے طبی معائنے کے بعد گرفتار کیا۔

واقعہ کے حوالے سے پولیس نے بتایا کہ اس واقعے کا علم جب سینٹرل پولیس افسر محمد فیصل رانا کو ہوا تو انہوں نے سپرنٹنڈنٹ پولیس (ایس پی) صدر رائے مظہر اقبال کو بچے کا طبی معائنہ کروانے کے بعد ملزم کے خلاف کارروائی کرنے کی ہدایت کی۔ جب پولیس کارروائی کے لیے پہنچی تو ملزم نے دیگر افراد کے ساتھ مل کر اپنے آپ کو بے گناہ ثابت کرنے کی کوشش کی اور پولیس کے خلاف نعرے بازی بھی کی۔

(جاری ہے)

بچے کے طبی معائنے میں اس بات کی تصدیق ہوگئی کہ اس کے ساتھ بد سلوکی کی گئی جس کے بعد ملزم کو حراست میں لیا گیا تاہم پولیس نے اس سلسلے میں ڈی این اے ٹیسٹ کروانے کا بھی فیصلہ کر لیا ہے۔ جنسی استحصال کا نشانہ بننے والے بچے کے والد کی شکایت پر پولیس نے اُستاد پر مقدمہ بھی درج کرلیا۔ ایس پی مظہر اقبال کا کہنا تھا کہ ''اس کیس کی شفاف طریقے سے تحقیقات کرنے کے لیے تمام تر اقدامات اٹھائے جائیں گے جس میں ڈی این اے ٹیسٹ اور دیگر قانونی کارروائیاں بھی شامل ہیں''۔

خیال رہے کہ حال ہی میں کم سن بچوں سے زیادتی کے واقعات میں کئی گنا اضافہ ہو گیا ہے۔ حال ہی میں چونیاں میں بھی کم سن بچوں کو زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کیا گیاتھا جبکہ گذشتہ روز اسلام آباد سے بھی ایک بچے کے اغوا کا واقعہ رپورٹ ہوا تھا۔

راولپنڈی شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments