پاکستان میں کرونا وائرس کے پہلے مریض یحییٰ جعفری کو ایئر پورٹ پر اسکین نہیں کیا گیا تھا

ایئرپورٹ صوبائی حکومت کے نہیں بلکہ وفاقی حکومت کی ذمہ داری ہوتی ہے، ایئر پورٹ پر فوری طور پر سرویلنس بنانے کی ضرورت تھی: ترجمان سندھ حکومت مرتضیٰ وہاب کا بیان

Usama Ch اسامہ چوہدری بدھ فروری 22:20

پاکستان میں کرونا وائرس کے پہلے مریض یحییٰ جعفری کو ایئر پورٹ پر اسکین ..
کراچی (اردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین 26 فروری 2020) : ایک نجی ٹی وی چینل سے بات کرتے ہوئے ترجمان سندھ حکومت مرتضیٰ وہاب کا کہنا ہے کہ پاکستان میں کرونا وائرس متاثر پہلے شخص یحییٰ جعفری کو ایئر پورٹ پر اسکین نہیں کیا گیا تھا۔ انکا کہنا ہے کہ کراچی میں کرونا وائرس سے متاثرہ مریض کو فوری طور پر آئسولیشن وارڈ منتقل کردیا گیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ متاثرہ مریض کے ساتھ جہاز میں سفر کرنے والے دیگر افراد کو بھی تلاش کیا جا رہا ہے۔

ایئرپورٹ صوبائی حکومت کے نہیں بلکہ وفاقی حکومت کی ذمہ داری ہوتی ہے۔ انکا مزید کہنا ہے کہ ایئر پورٹ پر فوری طور پر سرویلنس بنانے کی ضرورت تھی۔ اس حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ ایئرپورٹس پر اسکینگ کا عمل نہ ہونے کے برابر ہے۔ بتایا گیا ہے کہ بیرون ملک سے آنے والے مسافر بغیر اسکریننگ کے داخل ہورہے ہیں، ایئرپورٹس پر اسکرینگ کا عمل چند ہی دن چلا بعد ازاں اسے بند کردیا گیا۔

(جاری ہے)

ایئرپورٹ انتظامیہ کا کہنا ہے کہ باربار انتباہ کے باوجود اسکریننگ ٹیمیں توجہ نہیں دے رہی ہیں۔ دوسری جانب سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر پیغام دیتے ہوئے معاون خصوصی برائے نیشنل ہیلتھ ڈاکٹر ظفر مرزا کا کہنا ہے کہ ملک میں کرونا وائرس کے دو کیسز کی تصدیق کرتا ہوں، دونوں مریضوں کو ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے جہاں انکا علاج جاری ہے۔

انھوں نے کہا کہ دونوں مریضوں کی حالت خطرے سے باہر ہے اور حالات قابو میں ہیں۔ انکا مزید کہنا ہے کہ تمام ترحالات قابو میں ہیں، میں تافتان سے واپسی پر اس بارے میں ایک پریس کانفرنس کرونگا۔
واضع رہے کہ اس سے قبل کراچی میں کرونا وائرس کا پہلا کیس سامنے آ گیا ہے۔ اس حوالے سے محکمہ صحت سندھ کا کہنا تھا کہ مریض کی شناخت 22 سالہ یحییٰ جعفری کے نام سے ہوئی ہے جس کو علاج کے لیے نجی ہسپتال منتقل کردیا گیا تھا۔

بتایا گیا تھا کہ یحییٰ جعفری ایران سے بس کے ذریعے پاکستان پہنچا تھا اور اسکے ساتھ اہل خانہ بھی موجود تھے جنکا بھی معائنہ کیا جا رہا ہے۔ واضع رہے کہ ایران سے کرونا وائرس کی منتقلی کو روکنے کے لیے بلوچستان میں ایمرجنسی نافذ کر دی گئی تھی۔ وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال کا کہنا تھا کہ صوبے میں کرونا وائرس سے بچاؤ کے لیے اقدامات کی نگرانی کررہے ہیں۔ انھوں نے کہا تھا کہ وائرس سے بچاؤ کے لیے خصوصی ٹیمیں تشکیل دے دی گئی ہیں، ایران سے منسلک اضلاع میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے۔ انکا مزید کہنا تھا کہ ضلعی صحت افسران کو تمام احتیاطی تدابیر کی گئی ہے۔

راولپنڈی شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments