نہ انتظار ، نہ سفارش ، نہ رشوت،تھانوں کو کام کرنے کانیا ضابطہ اخلاق دے دیا گیا

تھانے میں پبلک ڈیلنگ اورپولیس ورکنگ ایریا الگ الگ ہو ںگے، درخواست اور ایف آئی آر کے زیادہ سے زیادہ درمیانی وقفہ کا تعین کردیا گیا

ہفتہ دسمبر 23:50

نہ انتظار ، نہ سفارش ، نہ رشوت،تھانوں کو کام کرنے کانیا ضابطہ اخلاق ..
راولپنڈی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 07 دسمبر2019ء) نہ انتظار ، نہ سفارش ، نہ رشوت،تھانوں کو کام کرنے کانیا ضابطہ اخلاق دے دیا گیا، تھانے میں پبلک ڈیلنگ اورپولیس ورکنگ ایریا الگ الگ ہو ںگے، درخواست اور ایف آئی آر کے زیادہ سے زیادہ درمیانی وقفہ کا تعین کردیا گیا ہے جس کی لسٹ ہر تھانہ میں آویزاں ہو گی جبکہ سی پی او نے کہا ہے کہ ایماندار شخص کمزور نہیں ہوسکتا ، کمزوری اور بزدلی ایمانداری کی نفی ہے ۔

تفصیلات کے مطابق سی پی او ٓفس راولپنڈی میں تھانوں کو جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کرنے کے لئے تھانہ جات کے محرروںاور فرنٹ ڈیسک سٹاف کیلئے تربیتی ورکشاپ کا انعقاد کیا گیا جس میں انہیں تھانے کے نظام کو جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کرنے کے لئے تربیت دی گئی، ایف آئی آر کے اندراج ، شہریوں سے روابط، ریکارڈ کی تکمیل و ترسیل ،گرفتاری کے قواعد و ضوابط کے بارے میں تربیت دی گئی۔

(جاری ہے)

تربیتی ورکشاپ کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے سٹی پولیس آفیسر راولپنڈی ڈی آئی جی محمد احسن یونس نے کہا کہ راولپنڈی پولیس میں اصلاحات لاتے ہوئے تھانوں میں پبلک ڈیلنگ اور پولیس ورکنگ ایریا کو الگ الگ کیا جا رہا ہے ،تھانوں کو جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کیا جارہا ہے ،نظام کو بہتر بنانے کے لئے تھانے میں تعینات محرر سٹاف پبلک ڈیلنگ نہیں کرے گا ، پبلک ڈیلنگ کا ذمہ دار صرف فرنٹ ڈیسک کا عملہ ہوگا ، درخواست اور ایف آئی آر کے زیادہ سے زیادہ درمیانی وقفہ کا تعین کردیا گیا ہے جس کی لسٹ ہر تھانہ میں آویزاں ہو گی، سی پی او راولپنڈ ی نے کہا کہ میری پولیسنگ میں تھانہ کے محرارن بہت اہمیت رکھتے ہیں ، آپ کو اپنے کام کو بہتر بنا کر سروس کے معیار کو بہتر بنانا ہو گا، اس سلسلہ میں ماہانہ میٹنگ کی جائے گی ۔

انہوں نے کہا کہ کرائم پاکٹس پر کرائم روکنا پولیس کی اولین ذمہ دار ی ہے، کرائم پاکٹس پر جرم سرذد ہونے پر متعلقہ افسران کو جواب دہ ہونا پڑے گا ،ایف آئی آر کے ساتھ ایڈوائزری جائے گی ،فرنٹ ڈیسک عملہ E-TAGکے ساتھ چیک لسٹ لگائیں ،سی پی او نے کہا کہ ایماندار شخص کمزور نہیں ہوسکتا ، کمزوری اور بزدلی ایمانداری کی نفی ہے ، ہمیں اپنے آپ کو بدلنا ہوگا ، قانون کے مطابق احکامات نہ ماننے پر جوابدہی ہوگی ، میرے لئے تمام افسران اور ملازم برابر ہیں ، پولیس والا بننے سے پہلے عام شہری بن کر سوچیں۔

متعلقہ عنوان :

راولپنڈی شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments