سکھر: حکومتی واضح احکامات کے باوجود ایس او پیز خلاف ورزیاں جاری

تجارتی وکاروباری مراکز سمیت بینکوں کے باہر سڑکوں پر بھی ایس او پیز مکمل نظر انداز، شہری حلقوں میں تشویش کی لہر، انتظامیہ سے نوٹس لینے کا مطالبہ

منگل دسمبر 21:17

سکھر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 01 دسمبر2020ء) سکھرمیں حکومتی واضح احکامات کے باوجود ایس او پیز خلاف ورزیاں جاری ، تجارتی وکاروباری مراکز سمیت بینکوں کے باہر سڑکوں پر بھی ایس او پیز مکمل نظر انداز، شہری حلقوں میں تشویش کی لہر، انتظامیہ سے نوٹس لینے کا مطالبہ تفصیلات کے مطابق ملک کے دیگر شہروں کی طرح سندھ کے تیسرے بڑے شہر سکھر میں بھی حکومت سندھ کے واضح احکامات اور کورونا کیسز میں اضافے کے باوجود جہاں تاجر برادری ،دکانداروں کی جانب سے ایس او پیز کی خلاف ورزیاں جاری رہی وہی وفاقی حکومت کی جانب سے احساس پروگرام کفالت پیکج کی دوسری قسط اور سرکاری ملازمین کی تنخواہیں جاری ہونے کے بعد احساس پروگرام سینٹر اور بنکوں کے باہرمرد و خواتین کا رش نظر آرہا ہے لیکن ایس او پیز پر کسی قسم کا عملدرآمد نظر نہیں آرہا ہے ملک سمیت سندھ بالخصوص سکھر میں کورونا وائرس کے بڑھتے ہوئے کیسز بھی شہریوں کو گھروں میں قید نہیں کر سکے ہیں ، شہر کے مختلف تجارتی وکاروباری مراکز میں انتظامیہ کی جانب سے اسمارٹ لاک ڈاؤن اور ایس او پیز کے سخت احکامات کو بھی مکمل نظر انداز کیا جارہا ہے، جبکہ شہر کے مختلف علاقوں میں کھانے پینے کی دکانوں اور ہوٹلوں پر بھی ایس او پیز مکمل نظر انداز کیا جا رہا ہے جس کے باعث ملک کے دیگر شہروں کی طرح سکھر میں کرونا کیسز میں اضافہ کا خدشہ بڑھ رہا ہے۔

(جاری ہے)

شہری حلقوں نے سکھر انتظامیہ سے پرزور مطالبہ کیا ہے دیگر شہروں میں کرونا وائرس کے بڑھتے ہوئے کیسز کے پیش نظر سکھر میں ایس او پیز پر سختی سے عملدر آمد کراتے ہوئے شہریوں کی زندگی محفوظ بنانے میں اپنا کردار ادا کریں

متعلقہ عنوان :

سکھر شہر میں شائع ہونے والی مزید خبریں:

Your Thoughts and Comments