Moot Bhi Mari Dustarus Main Nahi

موت بھی میری دسترس میں نہیں

موت بھی میری دسترس میں نہیں

اور جینا بھی اپنے بس میں نہیں

آگ بھڑکے تو کس طرح بھڑکے

اک شرر بھی تو خار و خس میں نہیں

قتل و غارت کھلی فضا کا نصیب

ایسا خطرہ کوئی قفس میں نہیں

کیا سنے کوئی داستان وفا

فرق اب عشق اور ہوس میں نہیں

ظلم کے سامنے ہو سینہ سپر

حوصلہ اتنا ہم نفس میں نہیں

جوشؔ وہ جو کہیں کرو تسلیم

فائدہ کچھ بھی پیش و پس میں نہیں

اے جی جوش

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(619) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of A G Josh, Moot Bhi Mari Dustarus Main Nahi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 18 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of A G Josh.