Zakham Khatay Hain Aur Muskuratay Hain Hum

زخم کھاتے ہیں اور مسکراتے ہیں ہم

زخم کھاتے ہیں اور مسکراتے ہیں ہم

حوصلہ اپنا خود آزماتے ہیں ہم

آ لگا ہے کنارے سفینہ مگر

شور تو عادتاً ہی مچاتے ہیں ہم

ہم جو ڈوبیں تو کوئی نہ پھر بچ سکے

ایسا ساگر میں طوفاں اٹھاتے ہیں ہم

چور کر بھی چکے دل کے شیشے کو وہ

اپنی ہمت ہے پھر چوٹ کھاتے ہیں ہم

بے رخی سے جو دل توڑ دیتے ہیں جوشؔ

ان کے ہی پیار کے گیت گاتے ہیں ہم

اے جی جوش

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(664) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of A G Josh, Zakham Khatay Hain Aur Muskuratay Hain Hum in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 18 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of A G Josh.