Tumhain Gilla Hi Sahi Hum Tamasha Karte Hain

تمہیں گلا ہی سہی ہم تماشہ کرتے ہیں

تمہیں گلا ہی سہی ہم تماشہ کرتے ہیں

مگر یہ لوگ بھی کیا کم تماشہ کرتے ہیں

دکھائی دیتے نہیں اولاً مرے درویش

کہیں ملیں تو بہ رقصم تماشہ کرتے ہیں

یہ خاص بھیڑ ہے مرحوم بادشاہوں کی

یہاں سکندر آعظم تماشہ کرتے ہیں

شریک کار عبادت نہیں رہے کہ یہ لوگ

درون مجلس ماتم تماشہ کرتے ہیں

بس ایک پاؤں تھرکتا ہے رات دن مجھ میں

چہار سو کئی عالم تماشہ کرتے ہیں

کھلا ہے آج بھی اس خانقاہ عشق کا در

ملنگ آج بھی پیہم تماشہ کرتے ہیں

طیور دیکھنے آتے ہیں میری ایک جھلک

ہزار برگد و شیشم تماشہ کرتے ہیں

یہ شہر مجمع خالی سے گر نہیں ہے خوش

تو آؤ مل کے عزیزم تماشہ کرتے ہیں

کچھ ایسے لوگ ہیں میرے بھی ملنے والے لوگ

جو بر جنازہ و چہلم تماشہ کرتے ہیں

عاطف کمال رانا

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(505) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Aatif Kamal Rana, Tumhain Gilla Hi Sahi Hum Tamasha Karte Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 5 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Aatif Kamal Rana.