Na Ho Jiss Per Bharosa Uss Se Hum Yari Nahi Rakhte

نہ ہو جس پہ بھروسہ اس سے ہم یاری نہیں رکھتے

نہ ہو جس پہ بھروسہ اس سے ہم یاری نہیں رکھتے

ہم اپنے آشیاں کے پاس چنگاری نہیں رکھتے

فقط نام محبت پر حکومت کر نہیں سکتے

جو دشمن سے کبھی لڑنے کی تیاری نہیں رکھتے

خریداروں میں رہ کر زندگی وہ بک بھی جاتے ہیں

ترے بازار میں جو لوگ ہشیاری نہیں رکھتے

بناؤ گھر نہ مٹی کے لب ساحل اے نادانو

سمندر تو کناروں سے وفاداری نہیں رکھتے

انا کو سختیٔ حالات اکثر توڑ دیتی ہے

اسی ڈر سے کبھی فطرت میں خودداری نہیں رکھتے

در و دیوار سے ان کے بھلا کیا آئے گی خوشبو

جو گھر کے صحن میں پھولوں کی اک کیاری نہیں رکھتے

فقط لفظوں سے ہم داناؔ ہنر کی داد لیتے ہیں

قلم والے کبھی شوق اداکاری نہیں رکھتے

عباس دانا

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(467) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Abbas Dana, Na Ho Jiss Per Bharosa Uss Se Hum Yari Nahi Rakhte in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 16 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Abbas Dana.