Jab Nigah Talab Motabar Ho Gayi

جب نگاہ طلب معتبر ہو گئی

جب نگاہ طلب معتبر ہو گئی

منزل شوق دشوار تر ہو گئی

ساعت غم بھی کیا مختصر ہو گئی

تیری یاد آئی تھی کہ سحر ہو گئی

ہر حقیقت خود اپنی خبر ہو گئی

بدعت رنگ صرف نظر ہو گئی

رات محفل میں وہ بے نقاب آئے تھے

اور ہم نے یہ سمجھا سحر ہو گئی

اپنے پندار کی لاش ڈھوتے رہے

زندگی اپنی اس میں بسر ہو گئی

آئینے سے پلٹتی رہی ہر کرن

ہر نظر اپنی ہی پردہ در ہو گئی

کوئی الزام جلووں پہ آیا نہیں

بے بسی آنکھ کی مشتہر ہو گئی

وہ جو آئے تو سیلاب نور آ گیا

روشنی خود ہی سد نظر ہو گئی

چارہ سازی نہ کی حیف نظروں ہی نے

ہم نے سمجھا دعا بے اثر ہو گئی

ہائے پھر تیری باتوں میں دل آ گیا

پھر فسوں ساز تیری نظر ہو گئی

اپنے عجز نظر کا بھرم کھل گیا

بے حجابی تری دیدہ ور ہو گئی

طرزیؔ قدموں کے بدلے جبینیں ملیں

نارسی قسمت سنگ در ہو گئی

عبدالمنان طرزی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(497) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Abdul Mannan Tarzi, Jab Nigah Talab Motabar Ho Gayi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 22 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Abdul Mannan Tarzi.