Main Shab E Hijar Kiya Karoon Tanha

میں شب ہجر کیا کروں تنہا

میں شب ہجر کیا کروں تنہا

یاد میں تیری گم رہوں تنہا

ہیں ادھر گردشیں زمانے کی

ہے مقابل ادھر جنوں تنہا

کتنے بے نور ہیں یہ ہنگامے

میں بھرے شہر میں بھی ہوں تنہا

آدمی گھر گیا مسائل میں

رہ گئی زیست بے سکوں تنہا

وہ تو اس دور کے نہیں انساں

مل گیا ہے جنہیں سکوں تنہا

ہم سفر جب نیازؔ اندھیرے ہیں

شمع گھبرا رہی ہے کیوں تنہا

عبدالمتین نیاز

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1462) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Abdul Mateen Niyaz, Main Shab E Hijar Kiya Karoon Tanha in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 11 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Abdul Mateen Niyaz.