Hamain Naseeb Koi Dedawar Nahi Hota

ہمیں نصیب کوئی دیدہ ور نہیں ہوتا

ہمیں نصیب کوئی دیدہ ور نہیں ہوتا

جو دسترس میں ہماری ہنر نہیں ہوتا

میں روز اس سے یہیں ہم کلام ہوتا ہوں

درون روح کسی کا گزر نہیں ہوتا

جلا دئے ہیں کسی نے پرانے خط ورنہ

فضا میں ایسا تو رقص شرر نہیں ہوتا

محبتوں کے کئی اسم میں نے پڑھ ڈالے

عجب طلسم ہے وا اس کا در نہیں ہوتا

اگر میں شب کی سیاہی نہ چیر کر نکلوں

کوئی اجالا مرا ہم سفر نہیں ہوتا

کسی کے نقش قدم کی تھی جستجو ورنہ

میں اس طرح تو سخنؔ در بدر نہیں ہوتا

عبدالوہاب سخن

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(322) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Abdul Wahab Sukhan, Hamain Naseeb Koi Dedawar Nahi Hota in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 26 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Abdul Wahab Sukhan.