Fareeb Zar Muhabbat Nagar Khula Hua Hai

فریب زار محبت نگر کھلا ہوا ہے

فریب زار محبت نگر کھلا ہوا ہے

تمہارے خواب کا مجھ پہ اثر کھلا ہوا ہے

میں اڑ رہا ہوں فلک تا فلک خمار میں یوں

کہ مجھ پہ ایک جہان دگر کھلا ہوا ہے

عجیب سادہ دلی ہے مری طبیعت میں

چلا سفر پہ ہوں رخت سفر کھلا ہوا ہے

میں جانتا ہوں کہ کیا ہے یہ آگہی کا عذاب

جو حرف حرف مری ذات پر کھلا ہوا ہے

کہاں کھلی ہیں ابھی اس کی حیرتیں مجھ پر

جو اک جہان ورائے نظر کھلا ہوا ہے

اک انتظار میں قائم ہے اس چراغ کی لو

اک اہتمام میں کمرے کا در کھلا ہوا ہے

عبدالرحمان واصف

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(496) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Abdur Rahman Wasif, Fareeb Zar Muhabbat Nagar Khula Hua Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 10 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Abdur Rahman Wasif.