Bars K Bhi Na Mere Kaam Aa Saki Barish

برس کے بھی نہ مرے کام آ سکی بارش

برس کے بھی نہ مرے کام آ سکی بارش

ابھی وہ کھل ہی رہے تھے کہ دھل گئی بارش

بجھا سکی نہ کسی طور میری روح کی پیاس

بدن کی حد سے تجاوز نہ کر سکی بارش

عجب نہیں کہ جگر تک اتر گئی ہوتی

ہمارے ساتھ اگر خود بھی بھیگتی بارش

ہے ذکر یار اسی التزام سے رنگیں

مہکتا جسم جواں رات بے خودی بارش

ہمیں فریب نظر کا شکار ہوتے رہے

ہوا کے ساتھ بدلتی تھی سمت بھی بارش

کبھی تو راز دلوں کے ٹٹولتی عاصمؔ

کبھی تو جھانکتی آنکھوں میں سر پھری بارش

عبدالسلام عاصم

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1875) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Abdussalam Asim, Bars K Bhi Na Mere Kaam Aa Saki Barish in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 12 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Abdussalam Asim.