Ju Saaf Gou Hoon Tu Aunchi Jaga Khara MillooN Ga

جو صاف گو ہوں تو اونچی جگہ کھڑا ملوں گا

جو صاف گو ہوں تو اونچی جگہ کھڑا ملوں گا

وگرنہ تجھ کو کہیں خاک میں پڑا ملوں گا

تو سالوں بعد بھی مجھ کو منانے آئے تو

میں اپنی ایک ہی ضد پر تجھے اڑا ملوں گا

تو خود کو یوں ہی گراتا رہا تو آخر کار

میں تیرے قد سے تجھے سو گنا بڑا ملوں گا

لکیر کھینچ کے رکھنا تسلی کی خاطر

کہ اپنی حد سے نہ یکسر تجھے بڑھا ملوں گا

ہوں با وفا تو مرا سر نہیں جھکے گا کبھی

جو بے وفا ہوں تو پھر شرم سے گڑا ملوں گا

صداقتیں مری شاداب ہی رکھیں گی مجھے

میں زرد پتا نہیں ہوں کہ جو جھڑا ملوں گا

ستم سے بھاگ کے جینا ہے موت سے بد تر

برائے حق میں تجھے دار پر چڑھا ملوں گا

عابد عمر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(720) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Abid Umer, Ju Saaf Gou Hoon Tu Aunchi Jaga Khara MillooN Ga in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 10 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Abid Umer.