Hath Main Mahtab Ho Jaise

ہاتھ میں ماہتاب ہو جیسے

ہاتھ میں ماہتاب ہو جیسے

کھلی آنکھوں میں خواب ہو جیسے

میرے ہمسائے میں جو رہتا ہے

مجھ سا خانہ خراب ہو جیسے

چاند نکلا تو اس قرینے سے

اک حسیں بے حجاب ہو جیسے

ہم سفر ڈھونڈنے کو نکلا ہوں

موسم انتخاب ہو جیسے

یوں گناہوں کی یاد آتی ہے

آج یوم حساب ہو جیسے

آنکھ مدت سے تر نہیں عابدؔ

خشک اپنا چناب ہو جیسے

عابد ودود

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(615) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Abid Wadood, Hath Main Mahtab Ho Jaise in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken Urdu Poetry. Also there are 15 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Abid Wadood.