Deer Laga Di Tum Ne

دیر لگا دی تم نے

اس سے ملنا تھا بہت دیر لگا دی تم نے

اے مری عمر !

بہت دیر لگا دی تم نے

میں نے سوچا تھا کہ اس کار گہ ہستی میں

چند سانس اپنی فراغت کے گھنے سائے میں

کھینچ پاؤں تو اسی سمت چلا جاؤں گا

میں نے سوچا تھا کہ اس موڑ تلک جاؤں گا

جس سے رستے ، ابدیت کی طرف مڑتے ہیں

اور موجود کی ذلّت سے پرے

دشت امکاں میں

درختوں سے لپٹ جاؤں گا

اپنے دن رات کے لفظوں کی کھلی بارش میں

بھیگ جاؤں گا ،

اسی نام کے سائے سائے

چلتا جاؤں گا بہت دور تلک

وقت روٹھا ہوا بچہ ہے

منا لوں گا

تم نے اے عمر !

سنبھلنے نہ دیا

اپنی غفلت کی تھکاوٹ سے نکلنے نہ دیا

خواب کے بیچ ، جو اک اسم کا دروازہ تھا

کھولتے کھولتے ہر سانس گنوا دی میں نے

اے مری عمر .....

بہت دیر لگا دی تم نے

ابراراحمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(712) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Abrar Ahmad, Deer Laga Di Tum Ne in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 93 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Abrar Ahmad.