Kiya Kuch Aisa Hi Tha

کیا کچھ ایسا ہی تھا

وہاں ناشتے سے سجی میز تھی اور کافی کے پیالوں میں

جیسے دلوں کی تپش ، بھاپ بن کر

ہر اک سمت بہتی چلی جا رہی تھی

کوئی سرخوشی تھی

جدائی کی دل دوز چپ سے بھری

اور ہم ----------

اپنی اپنی زمینوں کے قصے سناتے ہوے

پیاسی آنکھوں سے اک دوسرے کو تکے جا رہے تھے

کہ جیسے یہ منظر رہے گا نہیں

ترے نرم ہونٹوں پہ کھلتا ہوا نام تھا

اور ماتھے پہ ازلوں کی پہچان تھی

جو چمکتی تھی اور ماند پڑتی تھی

اطراف کی دھند آمیز خوشبو میں

بانہوں میں اتری ہوی بجلیوں میں

مرے شہر جلتے ، مرے سال مرتے گئے

اور ہم دور تک نیند میں جیسے چلتے گئے

ہاں وہ تیرا نہیں تھا ، مرا خواب تھا

اور بہت دیر سے دیکھ رکھا تھا میں نے

بہت یاد تھا

میرے دل میں ہمیشہ سے آباد تھا

مگر ایسے لگتا تھا دنیا کی راتیں

اس اک خواب سے جگمگاتی رہیں گی

ہمیشہ یہی گیت گاتی رہیں گی

وہیں پر کہیں جلتی بجھتی ہوی روشنی میں بہت ہاتھ تھے

ماتمی حرکتوں میں اٹھے

پاؤں تھے رقص کرتے ، پھسلتے ہوے

ایک کونے میں تو میری آنکھوں سے لگ کر

کسی سحر میں مجھ سے کہتا رہا

"یہ مرا خواب ہے اور بہت دیر سے دیکھ رکھا ہے میں نے

اور ہم مشترک منزلوں کے لیے راہ گم کردہ راہی ہیں

اپنی مسافت کی بھٹکی ہوئی دھول ہیں "

کیا کچھ ایسا ہی تھا

کیا کچھ ایسا ہی ہے ؟

دیر تک ان سوالوں میں الجھے رہے

غیر واضح محبت کی لہروں پہ بہتے ہوے

کن فضاوں میں تحلیل ہوتے گئے .........................

میں یہاں ہوں پھر اک بار ،اپنے مقدر کی راہوں میں پھر سے بھٹکتا ہوا

ہاں وہ تیرا نہیں تھا مرا خواب تھا

جس کے ہمراہ میں زندگی سے گزرتا رہا ہوں

گزرتا رہوں گا

اور کسی روز

اس خواب کی تند یادیں لیے

تجھ سے ملنے کو آؤں گا ، جانے کہاں

اور بیٹھوں گا پھر سے ترے رو بہ رو

آشنائی کی مرجھائی رنگت لیے

پھر سے محو تمنا

اسی میز پر

جس پہ کافی کے کپ

کب سے اوندھے پڑے ہیں

ابراراحمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(421) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Abrar Ahmad, Kiya Kuch Aisa Hi Tha in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 93 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Abrar Ahmad.