Sab Jalta Hai

سب جلتا ہے

ہر جانب بارش ہوتی ہے

اور خواب اترنے لگتے ہیں

ٹھنڈک لے کر

دہلیز پہ دستک دیتی ہے

چاہت سے پاگل ہوا کوئی

اور دل میں خوشبو پھیلتی ہے

اور شام اترنے لگتی ہے

پھر اندھیارے کی خاموشی میں

آگ سلگنے لگتی ہے

کیوں آگ سلگنے لگتی ہے ؟

وہ آگ جو تیرے باہر ہے

وہ آگ جو میرے اندر ہے

سب جلتا ہے

آواز کے مخزن سے

ہر گوش سماعت تک

لفظوں کی شاخوں ، نظموں کے جنگل میں

اڑتے پرندوں تک ...

کہساروں سے میدانوں تک

بازاروں سے گلیاروں تک

فردا کے رخ سے تا بہ ابد ......

قبروں سے گھر تک

کپڑوں سے دروازوں تک

ہر خواب سے

خوشبو کی چوکھٹ تک

جلتا ہے .....

کن دنوں کی راکھ ہے

کانٹے چبھے ہیں آنکھوں میں

اک آگ ہے

دل میں لگی ہوئی

اک آگ ہے ..دل میں بجھی ہوئی

ابراراحمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(461) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Abrar Ahmad, Sab Jalta Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 93 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Abrar Ahmad.