Waqt Kuch Aaisa Aa Jata Hai

وقت کچھ ایسا آ جاتا ہے

وہ دن بھی تھے

جب رنگ گرا کرتے تھے

تمھاری باتوں سے

کوئی مجلس چلتی رہتی تھی

آوازوں کے جھرمٹ میں ، تمہاری

رس سے بھری ہوئی آواز کا افسوں تھا

جو آنکھوں میں رت جگے بچھاتا

خواب سجاتا رہتا تھا

سب چنتے تھے

وہ پھول ، تمھارے ہونٹوں سے

جو لمحہ لمحہ گرتے تھے

سب سنتے تھے

آواز کی انگلی تھام کے

اپنے رستے ڈھونڈتے رہتے تھے

پھر یوں ہوتا ہے

تیر کہیں سے چلتا ہے

اور دل میں ترازو ہوتا ہے

آواز میں گرہیں پڑتی ہیں

اور جل تھل ہونے لگتا ہے

اور کاغذ بھیگنے لگتے ہیں

تب سننے والے ہنستے ہیں

اور تمھارے لفظوں کو

قدموں سے روند کے

آگے بڑھتے جاتے ہیں

آ جاتا ہے

وقت کچھ ایسا آ جاتا ہے

اپنی لکنت سے گھبرا کر

چپ ہو جانا پڑتا ہے

پھر بولتے ہیں

وہ لوگ ، جو سب کچھ جانتے ہیں

اور اس سے پرے

راتوں کا قرینہ .. اپنی بانہیں کھولتا ہے

بھولی بسری آوازوں کی لہروں پہ کہیں

تم .. چکر کھانے لگتے ہو

کوئی چپ دہرانے لگتے ہو !

ابراراحمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(417) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Abrar Ahmad, Waqt Kuch Aaisa Aa Jata Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 93 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Abrar Ahmad.