Wo Bhi Tum Ho Ge

وہ بھی تم ہو گے

وہ بھی تم ہی تھے

مجھے .. اولین جدائی کی

تنگ و تاریک گھاٹیوں میں

دیواروں سے سر ٹکراتے ہوے ، دیکھتے

میری آوارگی سے اکتاہے ہوے راستوں پر

میرے لیے پھول کھلاتے --

اور یہ بھی تم ہی ہو

اجلے پیروں میں سرخ جوتی

اور جگمگاتے لباس میں

مسلسل رقصاں

والہانہ پن سے اچانک

گھوم کر رکتے

مجھے دیکھ کر حیران ہوتے ہوے

سمندر پار کے بلاوے پر

ایک تاریک سیارے سے

روانہ ہوتی ہوئی روشنی

ایک خالی ہو جانے والے گھر میں

رہ جانے والی مہک

تپائی پر پڑے چاۓ کے خالی کپ

بجھے سگرٹوں سے بھرا ایش ٹرے

لمس کی سرمئی دھند میں

ٹوٹی ہوئی ایک محفل کی پرچھائیں --

موڑ سے دکھائی دیتے

اونچی کرسی کے کمرے کی

تاریک کھڑکیوں اور دیواروں میں

بھٹکتی ہوئی آواز

خالی سیٹ پر رہ جانے والی خوشبو اور ویرانی --------

اور وہیں کہیں

تماشا بن جانے والے کی آنکھ میں

اتر جانے والا تیر

جو .. گھر کو لوٹتے ہوے

گر گیا ، تمھارے سامنے

کسی اور آسمان کے نیچے

کبھی مل سکنے کا آزار لیے --

اور وہ بھی تم ہو گے

جو کبھی .. بارشوں سے دھڑکتی کھڑکی کے شیشے سے

اپنی نمناک آنکھوں سے

میری جانب دیکھو گے

جب میں

دنیا کی خوبصورتی برداشت کرنے سے

انکار کرنے والا ہوں گا !

ابراراحمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(470) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Abrar Ahmad, Wo Bhi Tum Ho Ge in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 93 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Abrar Ahmad.