Wo Mere Rah Dekhti Hai

وہ میری راہ دیکھتی ہے

وہ میری راہ ایسے دیکھتی ہے

جیسے جاگتے میں نیند

یا نیند میں خواب دیکھتے ہیں

منہ اندھیرے کھیتوں کو جاتے ہوئے

کپاس کے پھول چنتے ہوئے

یا اوک سے پانی پیتے ہوئے ..

کاندھوں پر بادل دھرے

یا ہونٹوں میں پھول تھامے

کھلی چھت پر تاروں سے کھیلتے

یا لحاف میں منہ چھپائے

درختوں سے لپٹ کر

یا چاندنی اوڑھ کے

دن کے میدانوں میں

یا شام کی اوٹ سے

وہ .. ہواؤں کے رنگ دیکھتی ہے

اور میری راہ دیکھتی ہے

تعمیر سے انہدام تک

زمان و مکان کے درمیان

موجود سے معدوم تک

وہ میری راہ دیکھتی ہے

اور

زمین ، نیا آسمان اوڑھ لیتی ہے

پیڑ -- پرندے تبدیل کر لیتے ہیں

چاند نیے پانیوں پر جھک جاتا ہے

اجنبی موسموں کی

ہوا چلتی ہے .... راستوں میں

مٹی اڑتی ہے

اور بیٹھ جاتی ہے

وہ نیند میں چلتی ہے

اور میری راہ دیکھتی ہے

ابراراحمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(523) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Abrar Ahmad, Wo Mere Rah Dekhti Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 93 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Abrar Ahmad.