Hum Safari

ہم سفری

دو صدیاں کیسے بات کریں

سکھیاں بن جائیں

ساتھ چلیں

آکاش سے پھیلی دھرتی تک

شیشے کی اک دیوار کھنچی

کیا رمز ہے کیسا لہجہ ہے

کیا خبریں ہیں کیا قصہ ہے

اب ہاتھ ہلائیں مسکائیں

سرگوشی ہو یا چلائیں

اب سر ٹکرائیں پھولوں کی سوغات لیے

کیا بات بنے

دو صدیاں کیسے بات کریں

انکار سراسر نا ممکن

اقرار مکمل بے معنی

اب سات سمندر شیشے کی دیوار سے لگ کر

جھانک رہا ہے

گھور رہا ہے

جھنجھلاہٹ کا گھٹتا بڑھتا پاگل پن

ابرارالحسن

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(595) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Abrarul Hasan, Hum Safari in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 23 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Abrarul Hasan.