Garchey Iss Bunyad Hasti K Anasar Char Hain

گرچہ اس بنیاد ہستی کے عناصر چار ہیں

گرچہ اس بنیاد ہستی کے عناصر چار ہیں

لیکن اپنے نیست ہو جانے میں سب ناچار ہیں

دوستی اور دشمنی ہے ان بتاں کی ایک سی

چار دن ہیں مہرباں تو چار دن بیزار ہیں

جی کوئی منصور کے جوں جان کرتے ہیں فدا

وے سپاہی عاشقوں کی فوج کے سردار ہیں

یہ جو سجتی ہے کٹاری دار مشروع کی ازار

مارنے کے وقت عاشق کے ننگی تروار ہیں

دوستی اور پیار کی باتوں پے خوباں کی نہ بھول

شوخ ہوتے ہیں نپٹ عیار کس کے یار ہیں

جو نشہ جوانی کا اترے گا تو کھینچیں گے خمار

اب تو خوباں سب شراب حسن کے سرشار ہیں

کس طرح چشموں سیتی جاری نہ ہو دریائے خوں

تھل نہ پیرا آبروؔ ہم وار اور وے پار ہیں

نجم الدین شاہ مبارک

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(422) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Abroo Shah Mubarak, Garchey Iss Bunyad Hasti K Anasar Char Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 45 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Abroo Shah Mubarak.