Rakhe Koi Iss Tarhaan K Lalchi Ko Kab Talak Behla

رکھے کوئی اس طرح کے لالچی کو کب تلک بہلا

رکھے کوئی اس طرح کے لالچی کو کب تلک بہلا

چلی جاتی ہے فرمائش کبھی یہ لا کبھی وہ لا

مجھے ان کہنہ افلاکوں میں رہنا خوش نہیں آتا

بنایا اپنے دل کا ہم نیں اور ہی ایک نو محلا

رہی ہے سر نوا سنمکھ گئی ہے بھول منصوبہ

تری انکھیوں نیں شاید مات کی ہے نرگس شہلا

کیا تھا غیر نیں ہم رنگ ہو کر وصل کا سودا

تمہارا دیکھ مکھ کا آفتاب اس کا تو دل دہلا

کف پا یار کا ہے پھول کی پنکھڑی سے نازک تر

مرا دل نرم تر ہے اس کے ہوتے اس سے مت سہلا

جوابوں میں غزل کے آبروؔ کیوں کہل کرتا ہے

تو اک ادنیٰ توجہ بیچ کہہ لیتا ہے مت کہلا

نجم الدین شاہ مبارک

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(318) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Abroo Shah Mubarak, Rakhe Koi Iss Tarhaan K Lalchi Ko Kab Talak Behla in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 45 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Abroo Shah Mubarak.