Kaanta Sa Jo Chubha Tha Woh Lo Day Gaya Hai Kya

کانٹا سا جو چبھا تھا وہ لو دے گیا ہے کیا

کانٹا سا جو چبھا تھا وہ لو دے گیا ہے کیا

گھلتا ہوا لہو میں یہ خورشید سا ہے کیا

پلکوں کے بیچ سارے اجالے سمٹ گئے

سایہ نہ ساتھ دے یہ وہی مرحلہ ہے کیا

میں آندھیوں کے پاس تلاش صبا میں ہوں

تم مجھ سے پوچھتے ہو مرا حوصلہ ہے کیا

ساگر ہوں اور موج کے ہر دائرے میں ہوں

ساحل پہ کوئی نقش قدم کھو گیا ہے کیا

سو سو طرح لکھا تو سہی حرف آرزو

اک حرف آرزو ہی مری انتہا ہے کیا

اک خواب دل پذیر گھنی چھاؤں کی طرح

یہ بھی نہیں تو پھر مری زنجیر پا ہے کیا

کیا پھر کسی نے قرض مروت ادا کیا

کیوں آنکھ بے سوال ہے دل پھر دکھا ہے کیا

ادا جعفری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(621) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ada Jafri, Kaanta Sa Jo Chubha Tha Woh Lo Day Gaya Hai Kya in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 90 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ada Jafri.