Azaal Se Tey Thi Ju Unhoniyoon K Dar Se Lara

ازل سے طے تھیں جو ان ہونیوں کے ڈر سے لڑا

ازل سے طے تھیں جو ان ہونیوں کے ڈر سے لڑا

میں ایک عمر عبث اس اگر مگر سے لڑا

منگا کے پھول ادھر شاہزادی بھول گئی

ادھر سنا ہے کہ شہزادہ کوہ بھر سے لڑا

میں دوستی ہی میں ہٹ جاتا تیرے رستے سے

کمال ہے کہ تو مجھ ایسے بے ضرر سے لڑا

تھا اک محاذ _ حیات اس کے سر اٹھاتے ہی

سو وہ بھی ہنستے ہوئے تیشہ _ ہنر سے لڑا

تھے ایک دوسرے کی دسترس میں دونوں مگر

میں اپنے شر سے عدیل اور وہ اپنے شر سے لڑا

عدیل شاکر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(359) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Adeel Shakir, Azaal Se Tey Thi Ju Unhoniyoon K Dar Se Lara in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 49 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Adeel Shakir.