Jitni Mehnat Hai Utni Ujrat Kaam

جتنی محنت ہے اتنی اجرت کم

جتنی محنت ہے اتنی اجرت کم

کیا ہو مزدور کی اذیت کم

نظر آتی ہے اب وہ صورت کم

ہو گئی اور اک سہولت کم

دیکھ پائیں سب اپنے اپنے خواب

ہو اگر روشنی کی قیمت کم

کچھ تو تھا اس کا حسن دشمن ِ ہوش

کچھ ملی ہم کو دل سے مہلت کم

رات بھر کروٹیں بدلتے ہیں

جن کو ملتی ہے دن میں فرصت کم ہے

ہے عدیل ایک مسئلہ یہ بھی

دکھ زیادہ ہیں اور مروت کم

عدیل شاکر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(574) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Adeel Shakir, Jitni Mehnat Hai Utni Ujrat Kaam in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Sufi, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 49 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Sufi, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Adeel Shakir.