Naam Sunta Hoon Tera Jab Bhare Sansar K Beech

نام سنتا ہوں ترا جب بھرے سنسار کے بیچ

نام سنتا ہوں ترا جب بھرے سنسار کے بیچ

لفظ رک جاتے ہیں آ کر مری گفتار کے بیچ

ایک ہی چہرہ کتابی نظر آتا ہے ہمیں

کبھی اشعار کے باہر کبھی اشعار کے بیچ

ایک دل ٹوٹا مگر کتنی نقابیں پلٹیں

جیت کے پہلو نکل آئے کئی ہار کے بیچ

کوئی محفل ہو نظر اس کی ہمیں پر ٹھہری

کبھی اپنوں میں ستایا کبھی اغیار کے بیچ

ایسے زاہد کی قیادت میں تو توبہ توبہ

کبھی ایمان کی باتیں کبھی کفار کے بیچ

کبھی تہذیب و تمدن کا یہ مرکز تھا میاں

تم کو بستی جو نظر آتی ہے آثار کے بیچ

جس طرح ٹاٹ کا پیوند ہو مخمل میں عدیلؔ

مغربی چال چلن مشرقی اقدار کے بیچ

عدیل زیدی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(467) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Adeel Zaidi, Naam Sunta Hoon Tera Jab Bhare Sansar K Beech in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 28 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Adeel Zaidi.