Khul Giya Khalwat Tanhai Ka Qissa Ee Hai

کھل گیا خلوت تنہائی کا قصہ اے ہے

کھل گیا خلوت تنہائی کا قصہ اے ہے

چل گیا شہر میں افواہ کا سکہ اے ہے

قمری و طوطی و بلبل ہیں جسے دیکھ کے مست

اس گل اندام کو تم نے نہیں دیکھا اے ہے

کیا کہیں کیسا لگا چاند ہمیں اس کے بغیر

ڈوب کر جب غم ہجراں میں وہ نکلا اے ہے

اس کے فقرے سے میں کیا سمجھوں کوئی سمجھا دے

دفعتاً میری طرف دیکھ کے بولا اے ہے

الغرض قصۂ دو لفظ یہ سن لے اے دوست

کوچۂ یار بہ صد رنج نہ چھوٹا اے ہے

عفیف سراج

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(559) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Afeef Siraj, Khul Giya Khalwat Tanhai Ka Qissa Ee Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 24 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Afeef Siraj.