Suni Tu Uss Ne Gairoon Se Hawa Ko Gubadguman Hum Se

سنی تو اس نے غیروں سے ہوا گو بد گماں ہم سے

سنی تو اس نے غیروں سے ہوا گو بد گماں ہم سے

بہر صورت رہی بہتر ہماری داستاں ہم سے

زباں پر آئے گی کیا پاس ناموس محبت سے

نہیں دہرائی جاتی دل میں اپنی داستاں ہم سے

چنے تھے چار تنکے ایک دن صحن گلستاں میں

رہا تا زندگی برہم مزاج باغباں ہم سے

دہائی ہے غم مجبوریٔ امکاں دہائی ہے

کہ پھرتی ہیں دم رحلت ہماری پتلیاں ہم سے

سبک سر رہ چکے ہیں ہم بھی دنیا میں کبھی لیکن

یہ ذکر اس وقت کا ہے آپ جب تھے سرگراں ہم سے

قفس ہی ہو گیا طول اسیری سے نشیمن جب

نہ چھوٹے آشیاں سے ہم نہ چھوٹا آشیاں ہم سے

زمانہ دوسری کروٹ بدلتا بھی تو کیا ہوتا

بدل جاتی نہ افتاد زمین و آسماں ہم سے

بہار آنے سے پہلے اک پریشاں خواب دیکھا تھا

کہ جیسے فصل گل میں چھٹ رہا ہے آشیاں ہم سے

زمانہ سازیاں قرباں مآل اندیشیاں صدقے

وہ سننے آج بیٹھے ہیں ہماری داستاں ہم سے

مدد اے لذت ذوق اسیری اب یہ حسرت ہے

قفس والے بدل لیتے ہمارا آشیاں ہم سے

تصور میں کھنچا نقشہ ہے ان کے روئے رنگیں کا

بظاہر پردۂ دل میں ہیں افقرؔ وہ نہاں ہم سے

افقر موہانی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(784) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Afqar Mohani, Suni Tu Uss Ne Gairoon Se Hawa Ko Gubadguman Hum Se in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 27 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Afqar Mohani.