Wo Asmaan K Darkashanda Rahiyon Jaisa

وہ آسماں کے درخشندہ راہیوں جیسا

وہ آسماں کے درخشندہ راہیوں جیسا

اندھیری شب میں سحر کی گواہیوں جیسا

کرن شعور، دل جہل میں اتارتا جا

کہ وقت آن پڑا ہے تباہیوں جیسا

فقر فردا! ترے نام سے ملا ہے ہمیں

یہ ملک خواب، تری بادشاہیوں جیسا

نیاز و عرض سخن سے کہاں فرو ہووے

غرور و ناز کہ ہے کج کلاہیوں جیسا

کہا تھا کس نے کہ شاخ نحیف سے پھوٹیں

گناہ ہم سے ہوا بے گناہیوں جیسا

مری برات کسی اجنبی کا لکھا ہوا

یہ حرف حرف نوشتہ سیاہیوں جیسا

آفتاب اقبال شمیم

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(704) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Aftab Iqbal Shamim, Wo Asmaan K Darkashanda Rahiyon Jaisa in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Heart Broken, Birthday, Hope Urdu Poetry. Also there are 34 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Heart Broken, Birthday, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Aftab Iqbal Shamim.