Udhar Shaam Jab Jhankti Hai

اُدھر شام جب جھانکتی ہے

اُدھر شام جب جھانکتی ہے

تری چاپ سے جاگ جاتے ہیں آنگن

پرندے منڈیروں پہ رُک کر

سمندر کا رُخ دیکھتے ہیں

دھواں تیرے روزن سے اٹھ کر

مرے گھر پہ جا پھیلتا ہے

ہوا تیرے چہرے پہ رکتی ہے

اور کھول دیتی ہے آنچل

گلی سے گزرتے ہوئے گونجتے ہیں زمانے

تجھے تھام لیتا ہے

قرنوں سے بجھتی ہوئی سرد عمروں کا عالم

اُدھر شام جب جھانکتی ہے

اچانک گلی میں بکھرتی ہے آواز تیری

بہت دور تک سرمئی آنچلوں کا اندھیرا

بچھا جھومتا ہے

کسی کو بلاتے ہوئے تھکنے لگتی ہے کھڑکی

سمندر اترتا ہے دشتِ من و تو میں

ساون میں دل بھیگتے ہیں

بہت دھیرے دھیرے بکھرتے ہیں تارے

تھکے ہارے دل راستہ ڈھونڈتے ہیں

کسی ان کہی کو جگا کر

درِ خواب پر جا بکھرتے ہیں

گداگر صدائے گرفتہ

کنوئیں کی طرف پھینکتا ہے

نکلتا نہیں زردیٗ ہجر سے کوئی سکّہ

بکھرتا نہیں نان و جو سے ہراساں اندھیرا

اُدھر شام جب جھانکتی ہے

دلوں کے اندھیروں میں

مشعل کوئی پھوٹتی ہے

سمندر میں طوفان آنے سے پہلے

کھڑا جھانکتا ہے گلی میں مجاور

رتوں کی مسافت میں

بجھتے ہوئے دل پہ

کارِ سفر کا دھواں کانپتا ہے

ہوا خوابِ آئندہ کو لے کے

سوئی ہوئی رات میں

جاگتی ہے

اُدھر شام جب جھانکتی ہے

افضال نوید

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(378) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Afzaal Naveed, Udhar Shaam Jab Jhankti Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 23 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Afzaal Naveed.