Sitam Tu Yeh Hai K Hathoon Main Jaan Kuch Bhi Nahi

ستم تو یہ ہے کہ ہاتھوں میں جان کچھ بھی نہیں

ستم تو یہ ہے کہ ہاتھوں میں جان کچھ بھی نہیں

وگرنہ سامنے رکھّی چٹان کچھ بھی نہیں

فلک کو دُور سمجھتے ہیں یہ پرند مگر

جو میں اُڑوں تو وھاں تک اُڑان کچھ بھی نہیں

وہاں پہ دھوپ بھی آتی ہے اور بارش بھی

سمجھ رہے ہو جہاں سائبان کچھ بھی نہیں

میں پوجتا ہوں ترے آسمان کو لیکن

تری نظر میں مرا خاکدان کچھ بھی نہیں

گزر رہا ہوں جہاں سے کچھ اس طرح جیسے

ہَوا کے بعد ہَوا کا نشان کچھ بھی نہیں

افضل گوہر رائو

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(394) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Afzal Gohar Rao, Sitam Tu Yeh Hai K Hathoon Main Jaan Kuch Bhi Nahi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 25 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Afzal Gohar Rao.