Yeh Ju Dil Main Kayi Gardaab Nikal Ate Hain

یہ جو دل میں کئی گرداب نکل آتے ہیں

یہ جو دل میں کئی گرداب نکل آتے ہیں

تجھ تک آتے ھوئے پایاب نکل آتے ہیں

دیکھتا ھوگا سمندر بھی کوئ خواب ضرور

یوں جزیرے جو سرِ آب نکل آتے ہیں

میں نے یہ سوچ کے دشمن کو بھی ٹھکرایا نہیں

بعض پتھر بڑے نایاب نکل آتے ہیں

سلسلہ درد کا بس دل پہ نہیں ھے موقوف

رنج کے اور بھی اسباب نکل آتے ہیں

مجھ سے مت پوچھ مری عمرِ گذشتہ کا حساب

ایسے آنکھوں سے مرے خواب نکل آتے ہیں

اُس کنارے پہ جہاں ھے مری بستی گوھر

حال احوال کو سیلاب نکل آتے ہیں

افضل گوہر رائو

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(237) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Afzal Gohar Rao, Yeh Ju Dil Main Kayi Gardaab Nikal Ate Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 25 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Afzal Gohar Rao.