Shikast Zindagi Waise Bhi Mott Hi Hai Na

شکست زندگی ویسے بھی موت ہی ہے نا

شکست زندگی ویسے بھی موت ہی ہے نا

تو سچ بتا یہ ملاقات آخری ہے نا

کہا نہیں تھا مرا جسم اور بھر یا رب

سو اب یہ خاک ترے پاس بچ گئی ہے نا

تو میرے حال سے انجان کب ہے اے دنیا

جو بات کہہ نہیں پایا سمجھ رہی ہے نا

اسی لیے ہمیں احساس جرم ہے شاید

ابھی ہماری محبت نئی نئی ہے نا

یہ کور چشم اجالوں سے عشق کرتے ہیں

جو گھر جلا کے بھی کہتے ہیں روشنی ہے نا

میں خود بھی یار تجھے بھولنے کے حق میں ہوں

مگر جو بیچ میں کم بخت شاعری ہے نا

میں جان بوجھ کے آیا تھا تیغ اور ترے بیچ

میاں نبھانی تو پڑتی ہے دوستی ہے نا

افضل خان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(958) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Afzal Khan, Shikast Zindagi Waise Bhi Mott Hi Hai Na in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 47 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Afzal Khan.