Social Poetry of Afzal Khan - Social Shayari

افضل خان کی معاشرتی شاعری

شکست زندگی ویسے بھی موت ہی ہے نا

Shikast Zindagi Waise Bhi Mott Hi Hai Na

(Afzal Khan) افضل خان

نہیں تھا دھیان کوئی توڑتے ہوئے سگریٹ

Nahi Tha Dehaan Koi Torte Hue Cigratte

(Afzal Khan) افضل خان

کل اپنے شہر کی بس میں سوار ہوتے ہوئے

Kal Apne Sheher Ki Bas Main Sawar Hote Hue

(Afzal Khan) افضل خان

تو پھر وہ عشق یہ نقد و نظر برائے فروخت

Tu Phir Wo Ishq Pey Naqt O Nazar Baraye Farokhat

(Afzal Khan) افضل خان

ہوا کا شکریہ، اس نے دھواں جانا ہے مجھ کو

Hawa Ka Shukria Os Nay Dhunwan Jana Hae Mujh Ko

(Afzal Khan) افضل خان

شکستِ زندگی ویسے بھی موت ہی ہے نا

Shikast E Zindagi Waesay Bhi Maot Hi Hae Na

(Afzal Khan) افضل خان

وصل کا شکریہ مگر دل کو ملال اور تھا

Wasl Ka Shukria Magar Dil Ko Malal Aor Tha

(Afzal Khan) افضل خان

وہ جو اک شخص وہاں ہے وہ یہاں کیسے ہو

Woh Jo Ik Shakhs Wahan Hae Woh Yahan Kaesay Ho

(Afzal Khan) افضل خان

کیا رو کے مانگنی ہے خوشی کے لیے دعا

Kia Ro Kay Mangni Hae Khushi Ke Liay Dua

(Afzal Khan) افضل خان

عشق میں شعلہ بیانی کی طلب تھی مجھ کو

Ishq Mein Shola Bayani Ki Talab Thi Mujh Ko

(Afzal Khan) افضل خان

یہ گنجِ آب تو فقط ہے زائرین کے لیے

Yeh Ganj E Aab Tu Faqat Hae Zaereen Ke Liay

(Afzal Khan) افضل خان

تبھی تو حالِ زبوں نہیں ہے

Tabhi Tu Haal E Zabon Nahin Hae

(Afzal Khan) افضل خان

تیرے رستے میں یونہی بیٹھا ہوں فریادی نہیں

Teray Rastay Mein Yun Hi Baetha Hun Faryadi Nahin

(Afzal Khan) افضل خان

بازوﺅں ہی میں کوئی دم ہے نہ پتوار میں جان

Bazoun Hi Mein Koi Dam Hae Na Patwar Mein Jaan

(Afzal Khan) افضل خان

عجب اسیرِ تیرگی بنا دیا گیا دِیا

Ajab Aseer E Teergi Bana Diya Gaya Diya

(Afzal Khan) افضل خان

اب رو رہا ہوں راکھ کے انبار دیکھ کر

Ab Ro Raha Hun Raakh Kay Anbaar Dekh Kar

(Afzal Khan) افضل خان

تعلقات کی صورت نکالیے صاحب

Talqat Ki Soorat Nikaliay Sahab

(Afzal Khan) افضل خان

تیرے جانے سے زیادہ ہیں نہ کم پہلے تھے

Teray Janay Se Ziyada Hain Na Kam Pehlay Thay

(Afzal Khan) افضل خان

روانہ ہو گئیں آفات بھی بلاﺅں کے ساتھ

Rawana Ho Gaein Aafat Bhi Balaon Kay Sath

(Afzal Khan) افضل خان

ایسے دنوں میں جب کہ یہ بیوپار بند ہے

Aesay Dinon Jab Keh Yeh Biopar Band Hae

(Afzal Khan) افضل خان

ختم ہوئی آخر بے خوابی دریا میں

Khatm Hoi Akhir Bay Khwabi Darya Mein

(Afzal Khan) افضل خان

تشنگی اور ہے منظر ہے مسلسل کوئی اور

Tashnagi Aor Hae Manzar Hae Musalsal Koi Aor

(Afzal Khan) افضل خان

اب اس لڑائی میں ممکن ہے سر چلا جائے

Ab Es Larai Mein Mumkin Hae Sar Chala Jaey

(Afzal Khan) افضل خان

ہم نے یہ سوچ کے جذبات پہ ڈالی نہیں چھت

Hum Ne Yeh Soch Kay Jazbaat Pe Dali Nahin Chhat

(Afzal Khan) افضل خان

Records 1 To 24 (Total 36 Records)

Social Shayari of Afzal Khan - Poetry of Social. Read the best collection of Social poetry by Afzal Khan, Read the famous Social poetry, and Social Shayari by the poet. Social Nazam and Social Ghazals of the poet. The best collection of Shayari by Afzal Khan online. You can also read different types of poetries by the poet including Social Shayari from different books of the poet.