Ishq Nasha Hai Nah Jadu Jo Utar Bhi Jaye

عشق نشہ ہے نہ جادو جو اتر بھی جائے

عشق نشہ ہے نہ جادو جو اتر بھی جائے

یہ تو اک سیل بلا ہے سو گزر بھی جائے

تلخیٔ کام و دہن کب سے عذاب جاں ہے

اب تو یہ زہر رگ و پے میں اتر بھی جائے

اب کے جس دشت تمنا میں قدم رکھا ہے

دل تو کیا چیز ہے امکاں ہے کہ سر بھی جائے

ہم بگولوں کی طرح خاک بسر پھرتے ہیں

پاؤں شل ہوں تو یہ آشوب سفر بھی جائے

لٹ چکے عشق میں اک بار تو پھر عشق کرو

کس کو معلوم کہ تقدیر سنور بھی جائے

شہر جاناں سے پرے بھی کئی دنیائیں ہیں

ہے کوئی ایسا مسافر جو ادھر بھی جائے

اس قدر قرب کے بعد ایسے جدا ہو جانا

کوئی کم حوصلہ انساں ہو تو مر بھی جائے

ایک مدت سے مقدر ہے غریب الوطنی

کوئی پردیس میں نا خوش ہو تو گھر بھی جائے

احمد فراز

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(4467) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ahmed Faraz, Ishq Nasha Hai Nah Jadu Jo Utar Bhi Jaye in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 154 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ahmed Faraz.