Sabhi Kahin Marey Gham Khawar Ke Ilawa Bhi

سبھی کہیں مرے غم خوار کے علاوہ بھی

سبھی کہیں مرے غم خوار کے علاوہ بھی

کوئی تو بات کروں یار کے علاوہ بھی

بہت سے ایسے ستم گر تھے اب جو یاد نہیں

کسی حبیب دل آزار کے علاوہ بھی

یہ کیا کہ تم بھی سر راہ حال پوچھتے ہو

کبھی ملو ہمیں بازار کے علاوہ بھی

اجاڑ گھر میں یہ خوشبو کہاں سے آئی ہے

کوئی تو ہے در و دیوار کے علاوہ بھی

سو دیکھ کر ترے رخسار و لب یقیں آیا

کہ پھول کھلتے ہیں گل زار کے علاوہ بھی

کبھی فرازؔ سے آ کر ملو جو وقت ملے

یہ شخص خوب ہے اشعار کے علاوہ بھی

احمد فراز

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(2845) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ahmed Faraz, Sabhi Kahin Marey Gham Khawar Ke Ilawa Bhi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 154 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ahmed Faraz.