Din Ko Rehtay Jheel Par Darya Kinare Raat Ko

دن کو رہتے جھیل پر دریا کنارے رات کو

دن کو رہتے جھیل پر دریا کنارے رات کو

یاد رکھنا چاند تارو اس ہماری بات کو

اب کہاں وہ محفلیں ہیں اب کہاں وہ ہم نشیں

اب کہاں سے لائیں ان گزرے ہوئے لمحات کو

پڑ چکی ہیں اتنی گرہیں کچھ سمجھ آتا نہیں

کیسے سلجھائیں بھلا الجھے ہوئے حالات کو

کتنی طوفانی تھیں راتیں جن میں دو دیوانے دل

تھپکیاں دیتے رہے بھڑکے ہوئے جذبات کو

درد میں ڈوبی ہوئی لے بن گئی ہے زندگی

بھول جاتے کاش ہم الفت بھرے نغمات کو

وہ کہ اپنے پیار کی تھی بھیگی بھیگی ابتدا

یاد کر کے رو دیا دل آج اس برسات کو

احمد راہی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1189) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ahmed Rahi, Din Ko Rehtay Jheel Par Darya Kinare Raat Ko in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 43 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ahmed Rahi.