Gham Hayaat Main Koi Kami Nahi Aayi

غم حیات میں کوئی کمی نہیں آئی

غم حیات میں کوئی کمی نہیں آئی

نظر فریب تھی تیری جمال آرائی

وہ داستاں جو تری دل کشی نے چھیڑی تھی

ہزار بار مری سادگی نے دہرائی

فسانے عام سہی میری چشم حیراں کے

تماشا بنتے رہے ہیں یہاں تماشائی

تری وفا تری مجبوریاں بجا لیکن

یہ سوزش غم ہجراں یہ سرد تنہائی

کسی کے حسن تمنا کا پاس ہے ورنہ

مجھے خیال جہاں ہے نہ خوف رسوائی

میں سوچتا ہوں زمانے کا حال کیا ہوگا

اگر یہ الجھی ہوئی زلف تو نے سلجھائی

کہیں یہ اپنی محبت کی انتہا تو نہیں

بہت دنوں سے تری یاد بھی نہیں آئی

احمد راہی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(672) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ahmed Rahi, Gham Hayaat Main Koi Kami Nahi Aayi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 43 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ahmed Rahi.