Jinhain Raas A Gaye Hain Yeh Sehar Numa Andheray

جنہیں راس آ گئے ہیں یہ سحر نما اندھیرے

جنہیں راس آ گئے ہیں یہ سحر نما اندھیرے

یہ تلاش صبح نو میں کبھی ہم سفر تھے میرے

تھیں جو قتل گاہیں ان کی ہیں وہی قیام گاہیں

تھے جو رہزنوں کے مسکن ہیں وہ رہبروں کے ڈیرے

میں جہان بے دلی میں کہاں لے کے جاؤں دل کو

مرے دل کی گھات میں ہیں یہاں چار سو لٹیرے

اے شبوں کے پاسبانوں میں یہ تم سے پوچھتا ہوں

جنہیں پوجتے رہے ہو وہ کہاں گئے سویرے

ارے میں تو بے نوا ہوں جو کبھی نہ بک سکے گا

ارے تم سنار ہو کر یہاں بن گئے کسیرے

احمد راہی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(603) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ahmed Rahi, Jinhain Raas A Gaye Hain Yeh Sehar Numa Andheray in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 43 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ahmed Rahi.