Qad O Gaisu Lab O Rukhsaar Ke Afsanay Chalay

قد و گیسو لب و رخسار کے افسانے چلے

قد و گیسو لب و رخسار کے افسانے چلے

آج محفل میں ترے نام پہ پیمانے چلے

ابھی تو نے دل شوریدہ کو دیکھا کیا ہے

موج میں آئے تو طوفانوں سے ٹکرانے چلے

دیکھیں اب رہتا ہے کس کس کا گریباں ثابت

چاک دل لے کے تری بزم سے دیوانے چلے

پھر کسی جشن چراغاں کا گماں ہے شاید

آج ہر سمت سے پر سوختہ پروانے چلے

یہ مسیحائی بھی اک طرفہ تماشا ہے کہ جب

دم الٹ جائے تو وہ زخموں کو سہلانے چلے

جس نے الجھایا ہے کتنے ہی دلوں کو یارو

ہم بھی اس زلف گرہ گیر کو سلجھانے چلے

احمد راہی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(311) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ahmed Rahi, Qad O Gaisu Lab O Rukhsaar Ke Afsanay Chalay in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 43 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ahmed Rahi.