Yeh Dastaan Gham Dil Kahan Kahi Jaye

یہ داستان غم دل کہاں کہی جائے

یہ داستان غم دل کہاں کہی جائے

یہاں تو کھل کے کوئی بات بھی نہ کی جائے

تمہارے ہاتھ سہی فیصلہ مگر پھر بھی

ذرا اسیر کی روداد تو سنی جائے

یہ رات دن کا تڑپنا بھی کیا قیامت ہے

جو تم نہیں تو تمہارا خیال بھی جائے

اب اس سے بڑھ کے بھلا اور کیا ستم ہوگا

زبان کھل نہ سکے آنکھ دیکھتی جائے

یہ چاک چاک گریباں نہیں ہے دیوانے

جسے بس ایک چھلکتی نظر ہی سی جائے

کوئی سبیل کہ یہ سحر جاں گسل ٹوٹے

کوئی علاج کہ یہ دور بے بسی جائے

احمد راہی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(927) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ahmed Rahi, Yeh Dastaan Gham Dil Kahan Kahi Jaye in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 43 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ahmed Rahi.